پہلے پارلیمنٹیرینز کے ٹیکس ریٹرنز ،پھر ایف بی آر سب کوپکڑے ،شوکت ترین

کراچی(نیٹ نیوز)سابق وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ منتخب ارکان اسمبلی پہلے اپنے ٹیکس ریٹرنز سامنے رکھیں پھر ایف بی آر کو سب کے پیچھے جانے کیلئے کہیں،ٹیکس سمیت دیگر شعبو ں میں اسٹرکچرل ریفارمز لانے کی ضرورت ہے، بائیس کروڑ لوگوں میں صرف بیس لاکھ ٹیکس ریٹرنز بہت بڑی زیادتی ہے، آئی ایم ایف کا8 ٹریلین روپے ٹیکس وصولی کا ہدف حاصل کیا جاسکتا ہے، آئی ایم ایف قرضہ کیلئے شرائط رکھتا ہے بہتر شرائط پر معاہدہ کرنا ہمارا کام ہے، ایکسچینج

ریٹ کی حقیقی قدر کے تعین کیلئے اسپیکولیٹرز کو درمیان سے نکالنا ہوگا، حفیظ شیخ اور رضا باقر پاکستانی ہیں ان کی حب الوطنی کو چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔وہ جیو نیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان شہزاد اقبال کے ساتھ“ میں میزبان شہزاد اقبال سے گفتگو کررہے تھے۔ پروگرام میں مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ سندھ میں ایڈز کے کیسز سامنے آنا الارمنگ صورتحال ہے، ایچ آئی وی مرض پھیلنا بڑا مسئلہ ہے لیکن اس کا حل کسی پریس کانفرنس یا جلسے جلوس میں نہیں ہے۔

وزیراطلاعات خیبرپختونخوا شوکت یوسف زئی نے کہا کہ ڈاکٹرز کے ساتھ مذاکرات کرنا چاہتے ہیں،وزیراعلیٰ نے انہیں اکیس مئی کو ملاقات کی دعوت دی لیکن انہوں نے مسترد کردی،پرامن احتجاج کرنا ڈاکٹرز کا حق ہے زبردستی کوئی او پی ڈی بند نہیں کروائیں۔ کنوینر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن خیبرپختونخوا ڈاکٹر عالمگیر خان نے کہا کہ ڈاکٹروں میں غم و غصہ پایا جاتا ہے جس کی وجہ سے ہڑتال ہورہی ہے، ہم نے ہمیشہ اپنے دروازے مذاکرات کیلئے کھلے رکھے ہیں، ہم مذاکرات میں جائیں گے لیکن ہماری ہڑتال جاری رہے گی۔سابق وزیرخزانہ شوکت ترین نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مزیدکہا کہ ٹیکس نہ

دینے والوں کے پیچھے جاکر ان سے ٹیکس لیا جائے، صنعتوں کو مقابلہ کے قابل بنانا اور زرعی شعبہ کو ٹھیک کرنا ہوگا، 750ارب خسارے میں جانے والی پبلک سیکٹر کمپنیوں کو منافع میں لانا ہوگا، دنیا میں ہاؤسنگ سیکٹر معیشت کی سمت کا تعین کرتی ہے لیکن ہماری اس پر توجہ ہی نہیں ہے، کسٹم میں بھی اصلاحات لانا ہوں گی اور انڈر انوائسنگ کو روکنا ہوگا، ٹیکس ٹو جی ڈی پی شرح اٹھارہ سے بیس فیصد تک لے جائیں تو اچھی بات ہوگی، فی الحال ٹیکس وصولی کیلئے ڈنڈا اٹھانے کے بجائے اصلاحات پر زور دیا جائے، ایف بی آر کو ہمیشہ ریونیو کی بتی کے پیچھے لگادیا جاتا ہے۔ شوکت ترین نے کہا

کہ آئی ایم ایف قرضہ کیلئے شرائط رکھتا ہے بہتر شرائط پر معاہدہ کرنا ہمارا کام ہے، 2008ء میں ہم نے بجٹ میں جو اہداف رکھے تھے وہی آئی ایم ایف کے سامنے رکھے، اسٹیٹ بینک کو ایکسچینج ریٹ کی حقیقی قدر کے تعین کیلئے اسپیکولیٹرز کو درمیان سے نکالنا ہوگا، ایکسچینج ریٹ میں استحکام لانا اسٹیٹ بینک کیلئے بڑا چیلنج ہوگا، نئی معاشی ٹیم معیشت کو ٹھیک کرنے سے متعلق اپنا نکتہ نظر سرمایہ کاروں کے سامنے پیش کرے اور ان کے تحفظات جانیں۔ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ

حفیظ شیخ اور رضا باقر پاکستانی ہیں ان کی حب الوطنی کو چیلنج نہیں کیا جاسکتا ہے، رضا باقر اچھے آدمی ہیں انہیں چانس دینا چاہئے۔مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ سندھ میں ایڈز کے کیسز سامنے آنا الارمنگ صورتحال ہے، ایڈز مریضوں کی اسکریننگ کیلئے صوبہ بھر میں کام شروع کردیا گیا ہے، جس شخص کے غلط کام کی وجہ سے ایڈز پھیلا اسے گرفتار کرلیا گیا ہے، ایسا گھناؤنا کام کرنے والے دیگر لوگوں کیخلاف بھی ایکشن لیا جارہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ورلڈکپ میں شکست کے بعد رنویر کی پاکستانی شائقین کو تسلیاں

ورلڈکپ میں بھارت کے ہاتھوں پاکستان کی شکست پر جہاں بھارتی فنکار خوشی سے نہال …