fbpx

اتوار بازاروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا

لاہور(اپنے نمائندے سے) اتوار بازاروں میں سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا۔ گزشتہ ہفتے کی نسبت سبزیاں پانچ سے پندرہ روپے مہنگی فروخت کی جا رہی ہیں۔مہنگائی نے شہریوں کو پریشان کردیا ہے۔ سبزیوں اور پھلوں کے ریٹس اتنی جلدی بڑھتے ہیں کسی کو یقین نہیں آتا اتنے تو بسوں اور ویگنوں کے کرائے نہیں بڑھتے جتنے سبزیوں کے ریٹس بڑھ جاتے ہیں جو حکومت تبدیل کا دعویٰ کرتی ہے ابھی تک وہ اتوار بازاروں میں ریٹس کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہو گئی ہے یہاں پر نہ تو بیٹھنے کا انتظام ہے اور نہ ہی پینے کے پانی کا انتظام کیا گیا ۔انتظامیہ کی نااہلی کے باعث ہم سستی سبزیاں مہنگے داموں خریدنے پر مجبور ہیں ،شہریوں کی دہائی، سروے کے دوران شہری محمد عرفان ،لیئق احمد ،شکیل نواز اور محمد سہہل رانا نے کہا کہ روزانہ کی بنیاد پر استعمال ہونے والی سبزیوں کی قیمتیں انتظامیہ کے کنٹرول سے باہر اور بے قابو ہو گئی ہیں کہ غریب آدمی اب سبزی کھانے سے پہلے بھی سوچنے پر مجبور ہو جاتا ہے،تمام تر نوٹسز اور پچھلے چند دنوں سے تمام تر معلومات کے باوجود انتظامیہ ان سبزیوں کی فراہمی اور قیمتیں کنٹرول میں بالکل ناکام ہو چکی ہیں جس کے باعث شادمان اتوار بازاروں میں آج بھی یہ سبزیاں مہنگے داموں فروخت ہو رہی ہیں خاص طور پر ہر پکوان میں استعمال ہونے والے ٹماٹر اور پیاز عوام کی پہنچ سے دور ہو چکے ہیں ،شہری عامر حسین،عدنا ن راشد،محمد سجاد اور حسیب اسلم نے کہا کہ شہر اور خاص طور پر شادمان اتوار بازار میں سبزیوں کی بڑھتی ہوئی قیمتیں خاص طور پر ٹماٹر اور پیاز کی قیمتوں کو قابو کرنے میں انتظامیہ مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے ،شادیوں کے سیزن کی وجہ سے ٹماٹر اور پیاز کی قیمتوں میں اضافہ ہو گیا ہے ہمارا انتظامیہ سے مطالبہ ہے کہ اس کے خلاف فوری طور مربوط کارروائی کی جائے تاکہ لاہوریئے اب سستی سبزیاں مہنگے داموں خریدنے پر مجبور نہ ہوں ،پہلے ہی ہم ہر جگہ ملاوٹ اور درجہ دوئم کی چیزیں استعمال کر رہے ہیں ،گوشت پر ہم بھروسہ نہیں کر سکتے ہیں کہ وہ حلال بھی ہے کہ نہیں اور محکمہ صحت سے منظور شدہ ہے بھی کہ نہیں۔صرف سبزیاں اور دالیں ہی وہ واحد چیزیں رہ جاتیں ہیں جو غریب طبقہ اور پسماندہ لوگ استعمال کرکے اپنی گزر اوقات کرتے ہیں لیکن انتظامیہ کی غفلت اور انتہائی لاپرواہی کی وجہ سے یہ چیزیں بھی اب ہم سے دور ہو گئیں ہیں ،ہمیں نہیں پتہ ہے کہ حکومت ہمارے ساتھ کیا کرنا چارہی ہے،میٹروپولٹین انتظامیہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ ،ٹماٹر اور پیاز کی قیمت میں ایک یا دو دن میں استحکام آجائے گا،عوام کو بہترین سہولتیں اور اشیاءخوردنی کی سستے فراہمی کے لئے ہر ممکن کوشش کررہے ہیں۔اتوار بازار میںپھل کچھ اس طرح فروخت ہو رہے تھے ۔ سیب کالا کہولو 120، انار قندھاری 140، انار دانے دار 190 ، مسمی 80روپے، جاپانی پھل 70، انگور سندر خانی 170، پپیتا 94روپے، انگور ٹافی 120، گرے فروٹ 18روپے، اتوار بازار میں سبزیوں کے ریٹ کچھ اس طرح سے تھے ادرک چائینہ 190، لہسن چائینہ 95، لہسن دیسی 70روپے، کھیرا فارمی 25، سبز مرچ دیسی 70روپے، کھیرا دیسی 50روپے، ٹماٹر 40شملہ مرچ 95روپے ، مونگرے 80، شلجم 30، کھیرا 50، ٹینڈے 85، کریلے 60گھیا کدو 23، لیموں 55، بھنڈی 55روپے ، سبز مرچ 70، پودینے کی فی گھٹی 6 روپے، بیگن 25روپے ، آلو نیا 36، پیاز 22روپے ، آلو شوگر فری 22 روپے فی کلو میں فروخت کئے جا رہے ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ سبزی اور پھل مہنگے داموں فروخت کئے جا رہے ہیں۔اتوار بازاروں میں پھل بھی مہنگے فروخت کئے جا رہے ہیں۔

یہ بھی چیک کریں

پاکستان کو سعودی عرب سے پیکج کی مد میں ایک ارب ڈالر کی پہلی قسط آج ملنے کا امکان

اسلام آباد: (نیٹ نیوز/میڈیا92نیوز) سعودی عرب کی جانب سے امدادی پیکج کی مد میں ایک …