اسمگلنگ، جعلی ڈگری سمیت سنگین جرائم پرمزید 23 پی آئی اے ملازمین برخاست

اسمگلنگ، جعلی ڈگری سمیت سنگین جرائم پرمزید 23 پی آئی اے ملازمین برخاست

اسلام آباد: اسمگلنگ، جعلی تعلیمی اسناد اور مالی بدعنوانی کے الزامات کے ثابت ہونے پر پی آئی اے کے مزید 23ملازمین کو نوکریوں سے برخاست کردیا۔

پی آئی اے کے شبعہ ہیومن ریسورس نے ملازمین کے خلاف کی جانے والی کاروائی کی فہرست جاری کر دی ہے.تفصیلات کے مطابق اسمگلنگ، جعلی تعلیمی اسناد اور مالی بدعنوانی کے الزامات کے ثابت ہونے پر پی آئی اے کے 38 ملازمین کے خلاف کاروائی کی گئی جن میں سے 23 ملازمین پر الزام ثابت ہونے پر ملازمت سے فارغ کر دیا گیا جبکہ دس ملازمین ضابطے کی کاروائی کے بعد بے قصور پائے گئے ہیں۔

رپورٹ کےمطابق پی آئی اے نے جعلی تعلیمی اسناد کے حامل 05ملازمین کو ملازمت سے فارغ کر دیا ہے جبکہ بغیر اطلاع کے کئی عرصے سے غیر حاضر 06 ملازمین کو فارغ کر دیا گیا ہے۔ سرکاری معلومات غیر قانونی طور پر افشا کرنے پر بھی ایک ملازم کو برطرف کیا گیا ہے۔اسی طرح پی آئی اے نے بدعنوانی اور غبن میں ملوث پانچ ملازمین کو برخاست کر دیا۔ایک ملازم کواسمگلنگ میں ملوث ہونے پر برطرف کیا گیا ہے۔سرکاری دستاویزات کی چوری اور ریکارڈ کو نقصان پہنچانے پر پانچ ملازمین بھی کو برخاست کیا گیا ہے جبکہ پی آئی اے نے احکامات کے مطابق کام نہ کرنے پر تین ملازمین کی تنزلی کر دی ہے۔ پی آئی اے نے ایس او پیز کی خلاف ورزی کر نے والے پانچ ملازمین کی تنخواہ میں کمی کر دی ہے۔ سات ملازمین کو تادیبی خطوط جاری کئے گئے ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیے: پی آئی اے نے 63 ملازمین کو نوکری سے برطرف کردیا

ترجمان پی آئی اے کے مطابق دس ملازمین ضابطے کی کارروائی کے بعد بے قصور پائے گئے ہیں اورپی آئی اے نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے 11ملازمین کو تعریفی اسناد بھی جاری کیں جبکہ 05 ملازمین کو نقد ایوارڈ بھی دیے گئے ہیں۔

ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے تمام کاروائیاں قانون اور ضابطے کی قواعد پورے کرکے کی گئیں پی آئی اے میں بغیر کسی دباو کے سزا جزا کا عمل جاری ہے اور جاری رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں

جنوبی کوریا میں بھی ڈرون ٹیکسی کی کامیاب پروازیں

جنوبی کوریا میں بھی ڈرون ٹیکسی کی کامیاب پروازیں

(میڈیا92نیوز) مسافروں کو پرہجوم شہروں میں ایک سے دوسری جگہ لے جانے والی اپنی اہم …