مقبوضہ کشمیر کی جدوجہد آزادی کے خلاف مودی سرکار نے چار نکاتی منصوبہ تیار کر لیا

سری نگر (میڈیا92نیوز) : مقبوضہ کشمیر میں رہنے والوں کی جدوجہد آزادی سلب کرنے اور ان پر مزید مظالم ڈھانے کے لیے مودی سرکار نے مذموم منصوبہ بندی مکمل کر لی ہے جو چار نکات پر مشتمل ہے۔ تفصیلات کے مطابق کشمیریوں کی آواز دبانے کے لیے بھارت کی ایک اور گھناؤنی سازش بے نقاب ہوگئی۔مودی سرکار نے جنت نظیر وادی پر اپنے قدم جمانے کے لیے ایک چار نکاتی طویل المدتی منصوبہ تشکیل دے دیا ہے۔
مودی سرکار کے اس منصوبے کے پہلے نکتے کے مطابق حریت رہنما اور دوسری کشمیری قیادت کو مستقل بنیادوں پر گھروں میں نظر بند رکھا جائے گا اور ان کی سرگرمیاں دیکھ کر انہیں رہا کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔ بھارتی سرکار کے اس مذموم منصوبے کے دوسرے نکتے کے مطابق بھارتی مظالم کے خلاف مظاہرے کرنے اور بھارتی گولیوں کا جواب پتھروں سے دینے والوں کمیونٹی بانڈز پر دستخط کروائے جائیں گے۔
جبکہ کشمیریوں کی تحریک آزادی کو روکنے کے لیے بھارتی فوج کو فری ہینڈ ملے گا۔ بھارت مخالف بیان بازی کرنے والوں سے کے خلاف انتہائی سخت اقدامات کیے جائیں گے۔ اس پر بات کرتے ہوئے دفاعی تجزیہ کار جنرل (ر) امجد شعیب نے کہا کہ مودی کا یہی وطیرہ رہا ہے۔ جب سے مودی حکومت میں آیا ہے اس کے ذہن میں تشدد کے سوا کوئی پُر امن راستہ نہیں آتا۔
اور یہیں آ کر انسانی حقوق کی پامالی ہوتی ہے کیونکہ ہر انسان کا حق ہے کہ وہ آزادانہ اپنی رائے کا اظہار کر سکے اور آزادی سے نقل و حرکت کر سکے۔ لیکن کشمیر میں رہنے والوں پر پابندیاں عائد کر دی گئی ہیں۔ بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں ان مظالم کے خلاف ہمیں پہلے سے ہی دنیا کو آگاہ کر دینا چاہئیے۔ بھارت اس معاملے میں اپنی من مانی ضرور کرے گا لیکن ہمیں اس معاملے پر پہلے سے آواز اُٹھا دینی چاہئیے تاکہ اقوام عالم کو پتہ چلے اور بھارت کو ایسا کرنے سے روکا جا سکے۔

یہ بھی پڑھیں

وزیراعظم سے آرمی چیف کی ملاقات، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بات چیت

اسلام آباد (میڈیا92نیوز آن لائن) وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ …