نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال ملتان میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا معاملہ

نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال ملتان میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا معاملہ

ہاؤس آفیسرز اور پی جی آرز کی تنخواہوں کی مد میں کروڑوں روپے کی خُرد بُرد کا انکشاف

لاہور (میڈیا 92 نیوز آن لائن)
پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے مطالبہ پر ڈی جی اینٹی کرپشن گوہر نفیس نے معاملہ کا نوٹس لے لیا

ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب کا کہنا تھا کہ ریجنل ڈائریکٹر ملتان حیدر عباس وٹو کو معاملے کی مکمل انکوائری کیلئے ہدایات جاری کر دیں ہیں۔ اینٹی کرپشن ملتان کے ڈپٹی ڈائریکٹر انویسٹی گیشن اور سرکل آفیسر پر مشتمل ٹیم 15دن میں رپورٹ مرتب کرکے جمع کرائے گی۔

ترجمان اینٹی کرپشن کا کہنا تھا کہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال ملتان کی انتظامیہ پر ہاؤس آفیسرز اور پی جی آرز کی تنخواہوں کی مد میں 1کروڑ 30لاکھ روپے خرد برد کرنے کا الزام ہے۔ پی ایم اے عہدیداران کے مطابق کلرک انتظامیہ کی ملی بھگت سے کروڑوں روپے دو مختلف اکاؤنٹس میں جمع کرواتے رہے۔

ڈی جی اینٹی کرپشن گوہر نفیس نے مزید کہا کہ پی ایم اے عہدیداران کے مطابق نشتر ہسپتال کے کمپیوٹر آپریٹر بلال اور بی زیڈ یو کے طالب علم ارسلان کے اکاؤنٹس میں پیسہ ٹرانسفر کیا گیا۔ پی ایم اے عہدیداران کے مطابق کلرک اپنے دوستوں کے اکاؤنٹس میں ہاؤس آفیسرز اور پی جی آرز کی تنخواہیں منتقل کرتے رہے۔ معاملے کی مکمل چھان بین کے بعد تمام حقائق دو ہفتے میں قوم کے سامنے رکھیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

جنوبی کوریا میں بھی ڈرون ٹیکسی کی کامیاب پروازیں

جنوبی کوریا میں بھی ڈرون ٹیکسی کی کامیاب پروازیں

(میڈیا92نیوز) مسافروں کو پرہجوم شہروں میں ایک سے دوسری جگہ لے جانے والی اپنی اہم …