تازہ ترین خبریں
وزیراعظم عمران خان فواد چودھری کے بیانن پر برہم،کابینہ اجلاس میں انہوں نے کیا کہا؟ خبرآگئی

وزیراعظم عمران خان فواد چودھری کے بیانن پر برہم،کابینہ اجلاس میں انہوں نے کیا کہا؟ خبرآگئی

اسلام آباد(میڈیا 92آن لائن) وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری کی جانب سے پارٹی رہنماوں پر لگائے گئے الزامات کی گونج گزشتہ روز کے کابینہ اجلاس میں بھی سنائی دی۔
ڈان نیوز کے مطابق اجلاس میں فواد چودھری کے امریکی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں جہانگیر ترین ، اسد عمر اور شاہ محمود پر لگائے گئے الزامات پر وزیراعظم نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہدایت کی کہ پارٹی کے اندرونی معاملات پر کھلے عام بات نہ کی جائے۔
کابینہ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں بھی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے بتایا تھا کہ فواد چوہدری کا معاملہ اجلاس میں زیر غور آیا تھا اور وزیراعظم نے اس پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی رائے ہے کہ پارٹی کے اندرونی معاملات پر ایسے بات چیت نہیں ہونی چاہیے۔
خیال رہے وائس آف امریکا کو دیئے گئے انٹرویو میں وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے انکشاف کیا کہ جہانگیر ترین نے زور لگا کر اسد عمر کو وزارت سے فارغ کرایا تھا،اسد عمر دوبارہ آئے تو جہانگیر ترین کو فارغ کرا دیا۔
انہوں نے کہا ان کا تجزیہ یہ ہے کہ مسئلہ یہ ہے کہ جب یہ حکومت بنی تو ہمارے جہانگیر ترین صاحب، اسد عمر صاحب اور شاہ محمود صاحب کی باہمی چپقلش کی وجہ سے سیاسی خلا پیدا، یہ سیاسی کھیل سے دور ہو گئے، ان کی جگہ دوسرے لوگ آئے جو سیاستدان تھے ہی نہیں اس لیے تحریک انصاف حکومت کو نقصان ہوا۔
واد چوہدری نے کہا ہے کہ اسد عمر، شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین کے اختلافات سے حکومت کو بہت نقصان پہنچا۔ اسد عمر کو جہانگیر ترین نے وزارت سے ہٹوایا تھا جس کا بعد میں انہوں نے بدلہ لیا۔ فواد چوہدری کے بقول پاکستان میں وزیر اعلیٰ اور چیف سیکریٹری کے عہدے تمام برائیوں کی جڑ ہیں۔
فواد چودھری نے کہا کہ پارلیمانی اور صوبائی لیڈرشپ کو دیکھیں تو دل پر ہاتھ رکھ کر کوئی بتائے کہ ایسے لوگوں کے ساتھ کیسے بہتری آسکتی ہے۔
انہوں نے کہاعمران خان کی جانب سے کمزور لوگوں کو اعلیٰ عہدوں پر بٹھانے سے خود عمران خان کو نقصان پہنچا۔
انہوں نے کہا ہم نے سمجھانے کی پوری کوشش کی، پہلے اسد عمر صاحب وزیر خزانہ تھے تو جہانگیر ترین نے پوری کوشش کرکے انہیں ہٹوایا، پھر اسد عمر آئے تو انہوں نے جہانگیر ترین کو ہٹانے کی پوری کوشش کی۔شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین میں ملاقاتیں ہوئیں لیکن بات بنی نہیں، ہر پارٹی میں گروپنگ ہوتی ہے لیکن جس شاخ پر بیٹھتے ہیں اسے کاٹا نہیں جاتا۔
فواد کے مطابق ہماری اندرونی لڑائی میں ہمارے سیاسی کارکن آوٹ ہوگئے جب کہ بیوروکریٹس نے ان کی جگہ لے لی۔
اس وقت ہم روٹین کی حکومت چلا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بالی ووڈ منشیات کیس میں دپیکا، سارہ اور شردھا تفتیش کیلیے طلب

بالی ووڈ منشیات کیس میں دپیکا، سارہ اور شردھا تفتیش کیلیے طلب

ممبئی (میڈیا 92نیوز آن لائن) بھارتی انسداد منشیات کے ادارے نیشنل نارکوٹکس بیورو نے بالی …